دسمبر 12, 2019

کاروان و چوکیوں پرحملے، 7 گاڑیاں تباہ،17 ہلاک

کاروان و چوکیوں پرحملے، 7 گاڑیاں تباہ،17 ہلاک

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے الفتح آپریشن کے سلسلے میں میدان، تخار، ننگرہار، غزنی اور قندوز صوبوں میں فوجی مراکز اور کانوائے پر حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق پیر کےروز سہ پہر کے وقت صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے حیدرآباد،زرک خیل اور ہفت آسیا کے علاقوں میں مجاہدین نے فوجی کاروان پر حملہ کیا،جس کے نتیجے میں ایک فوجی رینجر اور 4 سپلائی گاڑیاں تباہ ہونے کے علاوہ 5اہلکار بھی مارے گئے۔

رپورٹ کے مطابق صوبہ تخار ضلع خواجہ بہاؤالدین کے مرکز میں واقع چرسی نامی چوکی پر مجاہدین نے پیر اور منگل کی درمیانی شب وسیع حملہ کیا،جس کے نتیجے میں 6 اہلکار ہلاک جب کہ 8 زخمی ہوئے۔

دوسریجانب پیر کےروز شام کے وقت صوبہ ننگرہار ضلع غنی خیل کے سردار بہادرخان فارم کے قریب بم دھماکہ سے جنگجوؤں کی گاڑی تبا ہ اور اس میں سوار ایک اہلکار ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

صوبہ غزنی سے اطلاع ملی ہےکہ پیراورمنگل کی درمیانی شب ضلع آب بند کے سرفراز قلعہ کے علاقے میں چوکی پر حملے کے دوران 3 جنگجو زخمی ہوئیں اور اسی وقت ضلع مقر کے مرکز کے قریب شالم خیل کے علاقے میں مجاہدین نے ایک جنگجو کو قتل کردیا اور ان کی کلاشنکوف کو قبضے میں لیا،جب کہ اتوار اور پیر کی درمیانی شب مذکورہ علاقے میں جنگجوؤں کے درمیان باہمی لڑائی کے دوران ظالم جنگجو ولی محمد سمیت 3 ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے تھے۔اسی طرح پیر کےروز شام کے وقت صدرمقام غزنی شہر کے شہباز کے مقام پر چوکی پر مجاہدین نے میزائل داغے، جو تمام اہداف پر گریں اور وہاں کھڑی ٹینک بھی تباہ ہوئی۔

ذرائع کے مطابق منگل کے روز صبح کے وقت صوبہ قندوز ضلع امام صاحب کے قرغان تپہ نامی فوجی بیس پر سنائیپرگن حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔

Related posts