دسمبر 14, 2019

خوست و بلخ دعوت و حملے،کمانڈر سمیت11 ہلاک، 24 سرنڈر

خوست و بلخ دعوت و حملے،کمانڈر سمیت11 ہلاک، 24 سرنڈر

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے بلخ اور خوست صوبوں میں دشمن کو نشانہ بنانے کے علاوہ دعوت بھی دی۔

اطلاعات کے مطابق منگل کےروز صبح کے وقت صوبہ خوست ضلع قلندر کے غلنگ کے علاقے میں فوجی کاروان پر ہونے والے حملے میں 2 اہلکار ہلاک جب کہ ایک زخمی اور دوپہر  کے وقت ضلع موسی خیل کے سرہ کے مقام پر فوجی کاروان پر مجاہدین کے حملے میں 4 اہلکار قتل اور شام کے وقت  سپرکندہ کے مقام پر ایک بارپھرکاروان پر ہونے والے  حملے میں 2 اہلکار ہلاک جب کہ دیگر فرار ہوئے،جب کہ سر

صوبہ بلخ سے اطلاع ملی ہےکہ پیر اور منگل کی درمیانی شب عشاء کے وقت ضلع چمتال کے کجی  کے علاقے میں پولیس چوکی پر حملے کے دوران ایک اہلکار ہلاک جب کہ دوسرا زخمی اور عشاء ہی وقت ضلع شولگرہ کے سرمنگ کے مقام پر  مجاہدین نے جنگجو کمانڈر اکبردیو کو حکمت عملی کے تحت موت کے گھاٹ اتار دیا اور منگل کے روز دوپہر کے وقت ضلع خاص بلخ کے مرکز کے قریب کلپ بندر کے مقام پر مجاہدین نے ایک فوجی کو قتل کردیا۔

دوسری جانب گذشتہ چار روز کے دوران دعوت و ارشاد کمیشن کے کارکنوں کی جدوجہد کے نتیجے میں زارع، شولگرہ ، چمتال اور کشندہ اضلاع میں 24 سیکورٹی اہلکاروں نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار ہوئے، جن میں عبدالغفار ولد عبدالحلیم، گل زمان ولد حبیب، ضیاءخان ولد سلطان، عبدالقدوس، ملاصدرالدین، عبداللہ ولد عبدالوہاب، میرافغان ولد حاجی عبدالرسول، ذبیح اللہ ولد حاجی حفیظ اللہ،الف خان ولد گلاب، ظاہر ولد شہزادہ، عبدالرحیم ولد ملااعظم، حفیظ اللہ ولد عبدالمجید، سلطان ولد بیگ محمد، میرویس ولد نوراللہ، محمدحسن ولد محمدمراد، محمداسماعیل ولد ملا ایماق، ولی محمد ولد سیدنو، نصرت اللہ ولد عزت اللہ، ذبیح اللہ ولد حق بیردی، بازمحمد ولد گل بدین، عبدالقادر ولد سیف اللہ، قدرت اللہ ولد عبداللہ، نقیب اللہ ولد محمدگل، غلام سخی ولد عبدالرؤف اور عبدالرؤف ولد طوطی شامل ہیں۔

Related posts