نومبر 22, 2019

الفتح آپریشن: پانچ ٹینک وگاڑیاں تباہ، 30 اہلکار ہلاک وزخمی

الفتح آپریشن: پانچ ٹینک وگاڑیاں تباہ، 30 اہلکار ہلاک وزخمی

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے ہلمند، فراہ، قندہار وزابل صوبوں میں کٹھ پتلی فوجیوں پر حملہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز دو پہر گیارہ بجے کے لگ بھگ صوبہ قندہار ضلع شاولیکوٹ کے بادغسرئی کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکوں سے ٹینک ورینجر گاڑی تباہ اور ان میں سوار اہلکار ہلاک وزخمی ہوئے۔ اور بدھ کے روز سہ پہر تین بجے کے لگ بھگ ضلع میانشین کے خاشکش کے علاقے میں پارٹی پر مجاہدین کے حملے کے نتیجے میں رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 11 اہلکار موقع پر ہلاک ہوئے۔ اسی طرح جمعرات کے رات عشاء کے وقت آٹھ بجے کے لگ بھگ ضلع میوند کے شلغم کے علاقے میں لیزر گن حملے کے نتیجے میں 3 اہلکار ہلاک ہوئے۔ جبکہ بدھ کے روز دو پہر بارہ بجے کے لگ بھگ ضلع شورابک کے بادئی کاریز کے علاقے میں مجاہدین نے ایک کمانڈوز گرفتار کرکے ان کے مقدمہ شرعی عدالت کے حوالے کردیا۔

رپوٹ کے مطابق بدھ کے روز عصر پانچ بجے کے لگ بھگ صوبہ زابل ضلع ارغنداب کے دہ افغانان کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکہ سے ٹینک تباہ اور اس میں سوار اہلکار ہلاک ہوئے۔

جہادی ذرائع نے صوبہ ہلمند ضلع گرشک سے اطلاع دی کہ بدھ کے روز دو پہر گیارہ بجے کے لگ بھگ نہر سراج کے علاقے کے یخچال کے مقام پر دشمن پر حملے کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک ہوئے۔

موصولہ رپوٹ کے مطابق بدھ کے روز سہ پہر تین بجے کے لگ بھگ صوبہ فاریاب ضلع اندخوئی کے غجراباد کے علاقے میں امریکیوں اور ان کے کٹھ پتلیوں نے مجاہدین کے مورچوں پر حملہ کیا، جنہیں شدید مزاحمت کا سامنا ہوا اور لڑائی چھڑ گئی جس سے ٹینک تباہ، 8 کٹھ پتلی ہلاک، 3 مزید زخمی، جبکہ دیگر نے فرار کی راہ اپنالی۔ یاد رہے کہ دشمن کے فائرنگ سے ایک مجاہد زخمی، جبکہ 2 شہید ہوئے۔ تقبلہم اللہ تعالی، اور بدھ کے روز عصر کے وقت ضلع پشتونکوٹ کے پشتہ ھندرہ کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکہ سے ایک فوجی ہلاک، جبکہ 2 مزید زخمی ہوئے۔ جبکہ ضلع قیصار یکہ باغ کے علاقے میں 2 جنگجو (روزیقل ولد غلام محمد اور نیک محمد ولد نور محمد) نے مجاہدین کے سامنے ہتھیار ڈالے۔

Related posts