نومبر 16, 2019

مجاہدین کے حملے و دعوت،12 ہلاک، 12 سرنڈر

مجاہدین کے حملے و دعوت،12 ہلاک، 12 سرنڈر

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے بلخ اور میدان صوبوں میں دشمن کو نشانہ بنایا، جبکہ صوبہ پکتیکا میں سیکورٹی اہلکار سرنڈر ہوئے اور صوبہ جوزجان میں کمانڈر کو جنگجوؤں نے قتل کردیا۔

اطلاعات کے مطابق سنیچر اوراتوار کی درمیانی شب عشاء کے وقت اوراتوار کےروز صبح کے وقت صوبہ بلخ ضلع چاربولک کے گورتپہ کے علاقے میں فوجی بیس پر حملوں کے دوران 3 فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے اور عشاء کے وقت ضلع چمتال کے سراسیا کے مقام پر واقع فوجی بیس میں تعینات ایک فوجی کو مجاہدین نے قتل کردیا۔

دوسری جانب سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب رات گئے صوبہ جوزجان ضلع فیض آباد کے گرجک کے علاقے میں واقع چوکی میں تعینات جنگجو کمانڈر طورسن کو دو بیٹوں سمیت موت کے گھاٹ اتار دیااور ان کے اسلحہ وغیرہ کو ہتھیا لیا۔

واضح رہے کہ چند روز قبل طورسن کی چوکی میں دو لڑکے آئے تھے،لیکن کمانڈر کی بداخلاقی کی وجہ سے دونوں نے مل کر کمانڈر کو بیٹوں سمیت قتل کردیا۔

رپورٹ کے مطابق سنیچر کے روز صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے سالار،ملی خیل اور ہفت آسیا کے علاقوں میں فوجی چوکی اور گشتی پارٹی پر ہونے والے حملوں میں 2 فوجی مارے گئے۔

نیز چند روز قبل باغک کے علاقے میں آپریشن کے لیے آنے والے سیکورٹی فورسز پر مجاہدین کے حملوں میں 3 اہلکار ہلاک جب کہ 5 زخمی اور دیگر فرار ہوئے۔

واضح رہے کہ آپریشن کے دوران 5موٹرسائیکلوں کو نذرآتش،خانہ بدوشوں کے مال مویشی کو لےجانے کے علاوہ ایک شخص کو بھی زخمی کردیا۔

اسی طرح گذشتہ ایک ہفتہ کے دوران امارت اسلامیہ کے دعوت و ارشاد کمیشن کے کارکنوں کی دعوت کو لبیک کہتے ہوئے صوبہ پکتیکا ضلع وڑممائی کے مختلف علاقوں کے باشندوں 12 پولیس اہلکاروں اور مقامی جنگجوؤں نے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا،جن میں نعمان ولد علی خان، موسی ولد محمدیوسف، دین گل ولد دین محمد، محمد رسول ولد حاجی نجم، صبور ، دوران ولد جانان، سلیم ولد صادق، رضاخان ولد لعل گل، سدوزئی ولد علی خان، سروسول ولد افیاخان، عجب ولد بیٹنی اور عبداللہ ولد بازار شامل ہیں۔

Related posts