نومبر 16, 2019

ہلمند، قندہار وہرات: مجاہدین کے حملے، 33 فورسز ہلاک وزخمی

ہلمند، قندہار وہرات: مجاہدین کے حملے، 33 فورسز ہلاک وزخمی

الفتح آپریشن کے سلسلے میں ہلمند، قندہار وہرات صوبوں میں کٹھ پتلی فوجیوں، پولیس اہلکاروں اور جگنجوؤں پر حملہ ہوا۔

تفصیل کے مطابق جمعہ کے روز عصر پانچ بجے کے لگ بھگ صوبہ ہلمند ضلع گرشک کے نہر سراج کے علاقے کے پوپلزوں، یخچال، کمپرک، سیدان اور سپین مسجد کے مقام پر دشمن پر حملے ودھماکے ہوئے، جس کے نتیجے میں 6 اہلکار ہلاک، جبکہ 2 مزید زخمی ہوئے، دوسری جانب جمعہ کے روز سہ پہر دو بجے کے لگ بھگ ضلع واشیر کے مرکز کے قریب ہونے والے بم دھماکہ سے 2 فوجی ہلاک ہوا، اسی طرح جمعہ کے رات گیارہ بجے کے لگ بھگ ضلع مارجہ کے زقوام چارراہی کے علاقے میں واقع چوکی پر حملے کے نتیجے میں ایک اور فوجی ہلاک ہوا، جبکہ صوبائی دار الحکومت لشکرگاہ شہر کے سور گودر اور یونیورسٹی کے علاقوں میں آپریشن کرنے والے فوجیوں، پولیس اہلکاروں اور جنگجوؤں پر حمل ہوا، جس سے ٹینک تباہ اور پانچ اہلکار ہلاک ہوائے۔

رپوٹ کے مطابق جمعہ کے روز سہ پہر ایک بجے کے لگ بھگ صوبہ قندہار ضلع میوند کے کشک نخود اور قلعہ شامیر کے علاقوں میں دشمن پر بم دھماکے ہوئے، جس سے ٹینک تباہ اور 2 اہلکار ہلاک ہوئے۔

ذرائع نے صوبہ ہرات کے صدر مقام ہرات شہر سے اطلاع دی کہ پل مالان کے علاقے میں مسلحانہ کاروائی کے نتیجے میں 2 کمانڈر اور ایک آفسر ہلاک ہوا۔ اور جمعہ کے روز سہ پہر ایک بجے کے لگ بھگ ضلع کشک کہنہ کے پورانا بازار کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکہ سے ٹینک تباہ اور اس میں سوار سات اہلکار ہلاک ہوئے، اسی طرح دو روز پہلے ضلعی بازار میں مسلحانہ کاروئی کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک اور مجاہدین نے ان کے 2 بندوق غنیمت کرلیے، دوسری جانب جمعہ کے روز صبح نو بجے کے لگ بھگ ضلع رباط سنگئی کے غر کے علاقے میں دشمن پر حملے کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک، جبکہ ایک زخمی اور مجاہدین نے ایک کلاشنکوف غنیمت کرلیا۔

Related posts