نومبر 16, 2019

سانحہ ننگرہار کی شدید الفاظ میں مذمت کرتےہیں/مجاہد

سانحہ ننگرہار کی شدید الفاظ میں مذمت کرتےہیں/مجاہد

آج جمعہ کی نماز کے دوران صوبہ ننگرہار ضلع ہسکہ مینہ کے جودرہ گاؤں میں ایک مسجد میں ہونیوالے دھماکے یا حملے کی وجہ سے  تقریبا سو سے زائد افغان شہری شہید اور زخمی ہوئے۔

اب تک معلوم نہیں ہے کہ یہ سانحہ کابل انتظامیہ کی سیکورٹی فورس کے مارٹرگولے سے سامنے آیا اور یا مسجد کے اندر دھماکا ہوا۔

امارت اسلامیہ کے ترجمان جناب ذبیح اللہ مجاہدین نے اس سانحے کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

انہوں نے ایک ٹویٹ میں مذکورہ سانحہ کو کابل انتظامیہ کی سیکورٹی فورس کا عمل یا  داعش فتنہ گر گروہ کی جانب سے ہونیوالے ظلم کہا ۔

امارت اسلامیہ کے ترجمان نے کہا کہ "صوبہ ننگرہار کے ہسکہ مینہ کے ایک مسجد پر مارٹرتوپ حملے یا دھماکے  جو ممکن کابل انتظامیہ کی سیکورٹی فورسز اور یا داعش فتنہ گر گروہ کی جانب سے انجام ہوا، یہ ایک عظیم جرم ہے۔

امارت اسلامیہ اس ظلم کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔

شہداء کے لیے جنت الفردوس اور زخمیوں کے لیے فی الفور شفاء کی التجاتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق اس حملے میں 150 کے لگ بھگ نمازی حضرات شہید اور زخمی ہوئے ہیں۔

Related posts