نومبر 16, 2019

الفتح آپریشن،سیکریٹری،کمانڈر سمیت 19 قتل، غنائم

الفتح آپریشن،سیکریٹری،کمانڈر سمیت 19 قتل، غنائم

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل،نورستان،بدخشان، ننگرہار، لغمان اور خوست صوبوں میں اعلی حکام اور سیکورٹی فورسز کو نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق بدھ کےروز شام کے وقت ضلع پغمان کے ارغندی کے علاقے میں مجاہدین نے وزرات خزانہ کے سیکریٹری زینت اللہ ذبیح اللہ کو قتل کردیا اوران کی گاڑی کو نذرآتش کردی ،جب کہ عشاء کے وقت کابل شہر کے سینما پامیر کے علاقے میں مجاہدین نے اینٹلی جنس سروس اہلکاروں کی گاڑی پر دستی بموں سے حملہ کیا،جس میں گاڑی تباہ اور اس میں سوار ایک آفسر ہلا ک ہوا۔

صوبہ نورستان سے اطلاع ملی ہےکہ ضلع نورگرام کے شیمگل نامی مرکزی چوکی پر مجاہدین نے بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب حملہ کرکے اللہ تعالی کی نصرت سے اس پر قابض ہوئے اور وہاں تعینات 9 پولیس اہلکار ہلاک ہوئے اور مجاہدین نے 4 عدد امریکی رائفلیں،6 عدد کلاشنکوفیں، ایک عدد ہیوی مشین گن، ایک عدد راکٹ لانچر اور دیگر فوجی سازوسامان غنیمت کرلی اور بدھ کے روز شام کے وقت ضلع برگمٹال کے مربوطہ علاقے میں بم دھماکہ سے 2 فوجی ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے اور جمعرات کےروز صبح کے وقت ضلع کامدیش کے بینوز کے علاقے میں مجاہدین نے ایک جنگجو کو قتل کردیا۔

دوسری جانب جمعرات کے روز صبح کے وقت صوبہ بدخشان ضلع کشم کے ترناب کے علاقے میں مجاہدین نے جنگجو کمانڈر انور کو قتل کردیا اوران کی کلاشنکوف وغیرہ کو قبضے میں لیا۔

اسی طرح عشاء کے وقت صوبہ ننگرہار ضلع مہمنددرہ کے طورخم شہر کے قریب ٹول پلازہ کے قریب چوکی پر حملے کے دوران 2 فوجی ہلاک ہوئے۔

دریں اثناء صوبہ لغمان ضلع دولت شاہ شہر کے سردارصوفہ کے علاقے میں چوکی پر لیزرگن حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔

نیز بدھ کےروز دوپہر کے وقت صوبہ خوست ضلع علی شیر کے ببرک تھانہ کے علاقے میں مجاہدین کے حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

Related posts