نومبر 16, 2019

مجاہدین کے خونریز حملے،آفسر سمیت 26 ہلاک

مجاہدین کے خونریز حملے،آفسر سمیت 26 ہلاک

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے پکتیا، بدخشان،پروان، میدان، لوگراور بلخ صوبوں میں چوکیوں، کاروان اور گشتی پارٹیوں کو نشانہ بنایا۔

تفصیلات کے مطابق بدھ کےروز صبح کے وقت صوبہ پکتیا کے صدر مقام گردیز شہر کے قریب بم دھماکہ سے پولیس رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار پولیس اینٹلی جنس اسسٹنٹ سمیت 3 اہلکار ہلاک جب کہ ایک زخمی ہوااور بعد میں تورغونڈی نامی چوکی پر ہونے والے حملے میں ایک فوجی ہلاک ہوااور ابراہیم خیل کے علاقے میں جنگجوؤں پرہونے والے حملے میں ایک شرپسند ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔اسی طرح شام کے وقت ضلع پھٹان کے مربوطہ علاقے میں چوکی پر اسی نوعیت حملے میں ایک پولیس مارا گیا اور صبح کے وقت مقبل زیگاڑ کے مقام پر بم دھماکہ سے پولیس رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار ایک اہلکار ہلاک ہوا۔

دوسری جانب بدھ کےروز شام کے وقت صوبہ پروان کے صدر مقام چاریکار شہر کے چیکل رباط نامی چوکی پر مجاہدین نے حملہ کرکے اللہ تعالی کی نصرت سے اس پر قابض ہوئے اور وہاں تعینات 5 پولیس اہلکار قتل ہوئے،جن کے اسلحہ وغیرہ مجاہدین نے قبضے میں لیا۔

رپورٹ کے مطابق بدھ کےروز سہ پہر کے وقت صوبہ بدخشان ضلع وردوج کے زیرغنی کے علاقے میں بم دھماکہ سے جنگجوؤں کی گاڑی تباہ اور اس میں سوار 2 اہلکار لقمہ اجل بن گئے۔

رپورٹ کے مطابق منگل کےروز شام کے وقت صوبہ بلخ ضلع چاربولک کے پولیس ہیڈکوارٹر پر ہونے والے حملے میں 2 اہلکار ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے اور بدھ کےروز صبح کے وقت ضلع شورتپہ پولیس ہیڈکوارٹر پر سنائیپرگن حملے کے دوران ایک اہلکار مارا گیا۔

صوبہ لوگر سے اطلاع ملی ہےکہ منگل کےروز سہ پہر کے وقت ضلع چرخ کے پنگرام کے علاقے میں مجاہدین نے امریکی و کٹھ پتلی کمانڈو پر حملہ کیا،جس میں 6 کمانڈو ہلاک جب کہ 3 زخمی اور ایک بکتربند ٹینک بھی دھماکہ خیز مواد سے تباہ اور اس میں سوار اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق منگل کےروز شام کے وقت صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے شادی خیل اور لڑم کے علاقوں میں مجاہدین نے فوجی کاروان پر حملہ کیا،جس میں ایک فوجی کی ہلاکت کی اطلاع ملی اور دوپہر کے وقت لوہڑہ کے علاقے میں مجاہدین نے ایک فوجی کو قتل کر دیا جب کہ بدھ کےروز صبح کے وقت سلطان خیل کے مقام پر اسی نوعیت حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔

Related posts