اکتوبر 20, 2019

مجاہدین کے گوریلے حملے، ضلعی سربراہ سمیت 9 ہلاک

مجاہدین کے گوریلے حملے، ضلعی سربراہ سمیت 9 ہلاک

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل، ننگرہار، قندوز،غزنی اور بغلان صوبوں میں اعلی حکام اور سیکورٹی اہلکاروں کو نشانہ بنایا۔

اطلاعات کے مطابق سنیچر کےروز شام کے وقت کابل شہر کے کوٹہ سنگی کے علاقے میں گوریلا مجاہدین نے صوبہ میدان ضلع جغتو کے سربراہ رازمحمد کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور صبح کے وقت ضلع موسہی کے آہنگران گاؤں کے قریب کٹھ پتلی فوجوں پر ہونے والے حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا۔

نیز جمعہ کےروز صوبہ قندوز ضلع دشت آرچی کے تاجکی قشلاق کے علاقے میں مجاہدین کے حملوں میں 2 فوجی ہلاک ہوئے۔

دوسری جانب سنیچر کےروز صبح کے وقت صوبہ غزنی ضلع جغتو کے قیاق درہ کے علاقے سیاہ قلعہ کے مقام پر فوجی بکتربند ٹینک بارودی سرنگ کا نشانہ بن کر تباہ اور اس میں سوار اہلکاروں میں سے 4 موقع پر ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

اسی طرح جمعہ کےروز دوپہر کے وقت صوبہ بغلان ضلع پل خمری کے مرکز کے قریب عربان گاؤں میں پولیس ٹینک دھماکہ خیز مواد سے تباہ اور اس میں سواراہلکار ہلاک و زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق سنیچر کےروز صوبہ ننگرہار ضلع لعل پور کے بلال درہ چوکی کے قریب مجاہدین کے حملے میں 3 فوجی زخمی ہوئے اور جمعہ کےروز دوپہر کے وقت ضلع سپین غر کے مامند باغ کے مقام پر بم دھماکہ سے پولیس اہلکار ہلاک ہوا۔

ذرائع کے مطابق سنیچر کےروز ضلع مہمنددرہ کے ہزارناو کے رہائشی افغان فوجی شہادت ولد باغیچہ گل  اور ضلع اچین کے پیشہ کے رہائشی سیکورٹی اہلکار خالد خان ولد گل نظر  اور ضلع خوگیانی کے ہاشم خیل گاؤں کے باشندے پولیس اہلکار پیروز ولد قادر نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئےمخالفت سے دستبردار ہوئے اور شہادت نے   ایک کلاشنکوف بھی مجاہدین کے حوالے کردیا۔

دوسری جانب جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب صدر مقام جلال آباد شہر کے قریب واقع امریکی فوجی اڈے ننگرہار ایئرپورٹ پر مجاہدین نے میزائل داغے، جو اہداف پر گر کر غاصب دشمن کے لیے جانی ومالی نقصانات کے سبب بنے۔

Related posts