اکتوبر 20, 2019

بدخشان،میدان،بلخ و پکتیکا، کمانڈروں سمیت 14 قتل

بدخشان،میدان،بلخ و پکتیکا، کمانڈروں سمیت 14 قتل

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے بدخشان،بلخ، میدان اور پکتیکا صوبوں میں اعلی حکام اور کٹھ پتلی فوجوں  کو نشانہ بنایا۔

اطلاعات کے مطابق جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب صوبہ بدخشان ضلع وردوج کے آب جین کے علاقے میں مجاہدین نے جنگجو کمانڈر بازمحمد کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور ان کے اسلحہ وغیرہ  کو قبضے میں لیا۔

دریں اثناء صوبہ بلخ ضلع دولت آباد کے مرکز کی دفاعی چوکی میں تعینات رابط اہلکار نے وہاں موجود 4 پولیس اہلکاروں کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور رابط غازی 5 عدد کلاشنکوفوں، ایک ہیوی مشین گن، ایک عدد وائرلیس سیٹ اور دیگرفوجی سازوسامان کے ہمراہ مجاہدین تک پہنچنے میں کامیاب ہوا اور رات ہی کے وقت ضلع خاص بلخ کے بالاحصار نامی چوکی کے کمانڈر نورمحمد کو مجاہدین نے قتل کردیا، جب کہ شام کے وقت ضلع چمتال کے قوتن کے مقام پر چوکی پر ہونے والے حملے میں ایک جنگجو زخمی ہوا اور سنیچر کےروز دوپہر کے وقت اسیا خان کے مقام پربیس  پر حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا۔

دوسری جانب جمعہ کےروز شام کے وقت صوبہ پکتیککا ضلع مٹھاخان کے سیدو قلعہ کے علاقے میں مجاہدین نے جنگجو کمانڈر فولاد خان ولد کمانڈر گل خان کو حکمت عملی کے تحت قتل اور ان کی کلاشنکوف کو قبضے میں لیا اور سنيچر کے روز دوپہر کے وقت ضلع خیرکوٹ کے سیگانہ کے علاقے میں بم دھماکہ سے نے 4 فوجیوں کی جان لی، جب کہ ضلع یوسف خیل کے یوسف خیل گاؤں کے رہائشی 2 پولیس اہلکاروں ولی خان ولد امیرخان اور سرور ولد ظفر خان نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سےد ستبردار ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق جمعہ کےروز دوپہر کے وقت صوبہ میدان ضلع چک کے انبوخاک کے علاقے خوسا چینہ کے مقام پر بم دھماکہ سے 2 فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

Related posts