اکتوبر 20, 2019

مجاہدین کے حملے،26 ہلاک و زخمی، 4 سرنڈر

مجاہدین کے حملے،26 ہلاک و زخمی، 4 سرنڈر

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے بدخشان، غزنی، پکتیا، ننگرہار،کابل اور بلخ صوبوں میں فوجی مراکز اور گشتی پارٹیوں کو نشانہ بنایا۔

اطلاعات کے مطابق بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب صوبہ بدخشان ضلع کشم کے مادآبہ نامی چوکی پر مجاہدین نے حملہ کرکے وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 3 پولیس اور دیگر فرارہوئے اور مجاہدین نے ایک کلاشنکوف بھی قبضے میں لیا۔👇

صوبہ غزنی سے اطلاع ملی ہےکہ بدھ کےروز شام کے وقت ضلع خواجہ عمری کے چارقلعہ کے مقام پر مجاہدین کے حملے میں 2 پولیس ہلاک اور  عشاء کے وقت ضلع دہ یک کے مرکز اور دو چوکیوں پر ہونے والے حملے میں 3 فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے،اس کے علاوہ ضلع رشیدان کے  مل گاؤں کے رہائشی افغان کریم خان ولد زلمے نے  حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مجاہدین سے آملے۔

رپورٹ کے مطابق جمعرات کےروز صبح کے وقت صوبہ ننگرہار ضلع غنی خیل کے نہرنمبر26 کے علاقے میں حمکت عملی کے تحت ہونے والے دھماکہ سے 6 اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے اور دوپہر کے وقت ضلع کامہ کے مماخیل گاؤں کے قریب چوکی کے سامنے اسی نوعیت حملے سے 2 فوجی زخمی ہوئے، جب کہ ضلع خوگیانی کے رہائشی 3 سیکورٹی اہلکاروں جواد ولد محب اللہ، محمدنصیر ولد نظیر اور انعام اللہ ولد بازمحمد نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

دوسری جانب بدھ کےروز صبح کے وقت صوبہ کابل ضلع پغمان کے برہ ارغندی کے علاقے پریکڑہ کے مقام پر بم دھماکہ سے 2 فوجی زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق رات کے وقت صوبہ پکتیا ضلع زرمت کے عزت خیل اور جمعرات کےروز صبح کے وقت مقرب خیل کے علاقوں میں مجاہدین کے حملوں میں 2 فوجی ہلاک جب کہ ایک زخمی اور دو موٹر سائیکلیں بھی تباہ ہوئيں۔

اسی طرح بدھ کےروز شام کے وقت صوبہ بلخ ضلع چاربولک کے اوزلوک کے علاقے میں فوجی بیس پر حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ ایک زخمی اور جمعرات کےروز صبح کے وقت لبک کے مقام پر فوجی بیس پر سنائیپرگن حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔

Related posts