اکتوبر 20, 2019

فورسز پر لیزر گن حملے، 13 اہلکار ہلاک

فورسز پر لیزر گن حملے، 13 اہلکار ہلاک

 

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے ہلمند، ہرات، وزابل صوبوں میں پولیس وفوجیوں پر حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق پیر کے روز عصر پانچ بجے کے لگ بھگ ضلع ناوہ کے خسراباد کے علاقے میں سانئپر گن حملے کے نتیجے میں پولیس ہلاک، جبکہ منگل کے راتگ دو بجے کے لگ بھگ نرئی ماندہ کے علاقے میں واقع پولیس چوکی پر مجاہدین نے حملہ کیا، جس سے ایک اہلکار ہلاک اور دوسرا زخمی ہوا۔

دوسری جانب صوبہ نیمروز ضلع خاشرود کے گروں گاؤں کے باشندہ غلام علی ولد دستگیر نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مجاہدین کے سامنے ہتھیار ڈالا۔

صوبہ ہرات ضلع غوریان سے اطلاع ملی ہے کہ نا کام دشمن نے مفتوحہ یونٹ وچوکی کے تعمیر کرنے کا نا کام کوشش کی، اور مجاہدین نے یونٹ وچوکی منھدم کردیا۔

روپوٹ کے مطابق بدھ کے روز صبح نو بجے کے لگ بھگ صوبائی دار الحکوت صوبہ زابل کے صدر مقام قلات شہر کے سپین غبرگ کے علاقے میں دشمن پر مجاہدین نے حملہ کیا، جس کے نتیجے میں پانچ اہلکار موقع پر ہلاک ہوئے، اسی طرح ضلع اتغر کے مرکز پر بدھ کے رات عشاء کے وقت آٹھ بجے کے لگ بھگ مجاہدین نے لیزر گن حملہ کیا، جس سے 2 اہلکار ہلاک ہوئے۔ دوسری جانب بدھ کے رات عشاء کے وقت نو بجے کے لگ بھگ ضلع میزان کے ٹکیر کے علاقے میں واقع چوکی پر حملے کے نتیجے میں 2 فوجی ہلاک ہوئے، جبکہ بدھ کے رات دس بجے کے لگ بھگ ضلع شہر صفا کے خورزان کے علاقے میں مجاہدین نے لیزر گن سے 2 اہلکاروں کو مار ڈالا، جبکہ منگل کے روز ضلع شاہ جوئی کے چینہ کے علاقے میں ایک جنگجو ( داود ولد فل محمد ) مجاہدین سے آملا۔

Related posts