اکتوبر 20, 2019

روزگان وبلخ حملے، کمانڈر سمیت 19 ہلاک

روزگان وبلخ حملے، کمانڈر سمیت 19 ہلاک

کٹھ پتلی فوجوں اور مقامی جنگجوؤں پر امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے روزگان اور بلخ صوبوں میں نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق پیر کےروز صبح کے وقت صوبہ روزگان ضلع دہراود کے دیقوری کے علاقے میں بم دھماکہ سے 2  فوجیوں کی جان لی، جب کہ عشاء کے وقت عثمان زئی کے مقام پر چوکی پر لیزرگن حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔

اسی طرح عشاء کے وقت ضلع چارچینہ کے سرتخت کے مقام پر چوکی پر ہونے والے حملے میں 4 فوجی ہلاک ہوئے اوراتوار کےروز شام کے وقت صدر مقام ترینکوٹ شہر کے خانقاہ کے مقام پر مجاہدین نے 2 فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

صوبہ بلخ سے آمدہ رپورٹ کے مطابق پیر کےروز ضلع چارکینت کے شول بلاق کے علاقے میں مجاہدین نے جنگجو کمانڈر عبدالرازق کو  محافظ سمیت موت کے گھاٹ اتار دیا اور ان کی موٹرسائیکل، ہیوی مشین گن اور کلاشنکوف کو قبضے میں لیا اور شام کے وقت ضلع خاص بلخ کے خواجہ پلاس پوش،غوالک اور شرشرک کے علاقوں میں فوجی بیس  اور گشتی پارٹی پر حملہ کیا،جس کے نتیجے میں  ایک موٹرسائیکل اور ایک رینجر گاڑی تباہ ہونے کے علاوہ 3 اہلکار ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

دوسری جانب ضلع چمتال کے آسیاگورگ اور ضلعی مرکز کی چوکی پر ہونے والے حملے میں 2اہلکار ہلاک جب کہ ایک زخمی ہوا اور ضلع چار بولک کے اوزلوک کے مقام پر فوجی بیس پر عشاء کے وقت ہونے والے حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔نیز عشاء کے وقت قوتن نامی چوکی پر ہونے والے حملے میں 2 جنگجو ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

Related posts