مجاہدین کے حملے،آفسروں سمیت 22 اہلکار ہلاک

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے اینٹلی جنس سروس آفسروں اور کٹھ پتلی فوجوں کو بلخ، ننگرہار، نورستان، کابل، خوست اور کاپیسا صوبوں میں نشانہ بنایا۔

آمدہ اطلاعات کے مطابق منگل کےروز دوپہر سے قبل صوبہ بلخ کے صدر مقام مزارشریف شہر کے محکمہ کے قریب حکمت عملی کے تحت ہونے والے دھماکہ سے اینٹلی جنس سروس آفسروں کی دو گاڑیاں تباہ ہوئیں اور ان میں سوار 7 اعلی اہلکار لقمہ اجل بن گئے۔

رپورٹ کے مطابق منگل کےروز مغرب کے وقت صوبہ ننگرہار ضلع پچیرآگام کے زمرخیل کے مقام پر اسی نوعیت دھماکہ سے 5 اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے اور رات کے وقت مذکورہ مقام پر بم دھماکہ سے فوجی رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 2 اہلکار زخمی ہوئے۔اسی طرح دوپہر کے وقت ضلع سرخ رود کے سرخیل چوکی کے مقام پر مجاہدین کے حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

اسی طرح ضلع کاپیسا ضلع تگاب کے ورسک، قلعہ ولی اور پشکڑی کے علاقوں میں فوجی چوکیوں پر ہونے والے حملوں میں 4 اہلکار ہلاک ہوئے اور ضلع نجرآب کے افغانیہ درہ کے علاقے برکت خیل گاؤں کے قریب چوکی پرمجاہدین کے حملے میں 2 فوجی ہلاک جب کہ ایک زخمی ہوا۔

دوسری جانب پیر کےروز صوبہ خوست کے صدرمقام خوست شہر کے فارم باغ کے علاقے میں بم دھماکہ سے کمانڈو زخمی اور ضلع صبری کے خلبسات کے علاقے میں چرہ دار بم دھماکہ نے پولیس اہلکار کی جان لی۔

اسی طرح مغرب کے وقت صوبہ میدان کے صدر مقام میدان شہر کے شہیدان بیس پر حملے میں ایک اہلکار ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا۔

رپورٹ کے  مطابق منگل کےروز صبح کے وقت صوبہ کابل ضلع پغمان کے برہ ارغندی کے علاقے میں سوکی فوجی بیس پر ہونے والے حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا اور پیر کےروز مغرب کے وقت صوبہ نورستان ضلع وانٹ وایگل کے شینگل کے علاقے میں مجاہدین نے چوکی پر حملہ کرکے اللہ تعالی کی نصرت سے اس پر قابض ہوئے اور وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 3 زخمی جب کہ دیگر فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*