رابط اہلکار ومجاہدین حملے، 21 قتل، ٹینک وگاڑیاں تباہ

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین اور رابط اہلکار نے کٹھ پتلی دشمن کو جوزجان، غزنی اور پکتیا صوبوں میں نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق اتوار اورپیر کی درمیانی شب صوبہ جوزجان ضلع آقچہ کے آق محمد دیوانہ کے علاقے میں مجاہدین کے رابط اہلکار خالد  نے چوکی میں تعینات 4 جنگجوؤں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

واضح رہےکہ خالد بھی دشمن کی فائرنگ سے شہادت کے اعلی مقام پر فائز ہوئے۔ تقبلہ اللہ

رپورٹ کے مطابق اتوار اور پیر کی درمیانی شب صوبہ پکتیا ضلع احمدآباد کے فیروزخیل اورعطائی قلعہ کے مقام پر فوجی چوکی اور گشتی پارٹی پر ہونے والے حملوں کے دوران 4 سیکورٹی اہلکار ہلاک  ہوئےاورکابل انتظامیہ کے 4 اہلکاروں جاوید ولد کریم، حبیب الرحمن ولد نورالرحمن، عیدمحمد ولد عیدمرجان اور عیداللہ ولد عیدمرجان نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مجاہدین سے آملے۔

دوسری جانب پیر کےروز ضلع زرمت کے مقرب کے علاقے میں بم دھماکہ اور فوجی کاروان پر حملے کے دوران 7 اہلکار زخمی ہوئے، جب کہ رات کے وقت ضلع پھٹان کے نری کنڈاو کے علاقے میں پولیس کمانڈر گلاب شاہ پر ان کےبیٹوں نے حملہ کرکے انہیں 2 محافظوں سمیت زخمی ہوا

صوبہ غزنی سے آمدہ رپورٹ کے مطابق اتوار اور پیر کی درمیانی شب صدر مقام غزنی شہر کے قلعہ جوز کے مقام پر پولیس چوکی پر حملے کے دوران 2 اہلکار ہلاک ہوئے اور پیر کےروز ضلع مقر کے مانکو کے علاقے میں بم دھماکہ سے پولیس رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 3 اہلکار لقمہ اجل بن گئے۔اسی طرح پیر اور منگل کی درمیانی شب ضلع قرہ باغ کے کروسائے کے علاقے میں جنگجوؤں کی چوکی پر حملے نتیجے میں 4 شرپسند قتل ہوئے ۔نیز رات کے وقت عسکرکوٹ کے مقام پر واقع فوجی مرکز پر مجاہدین نے میزائل داغے، جواہداف پر گر کر دشمن کے لیے جانی و مالی نقصانات کے سبب بنے ،جب کہ منگل کےروز خالوخیل کے مقام پر مجاہدین کے حملے میں ایک بکتربند ٹینک تباہ ہونے کے علاوہ اس میں سوار اہلکاروں میں سے 3 ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔اسی طرح رات کے وقت ضلع شلگر کے نانی کے مقام پر چوکی پر لیزرگن حملے کے سلسلے میں 2 فوجی ہلاک ہوئے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*