مارچ 07, 2021

کاروائیاں: چوکیاں فتح، 2 ٹینک تباہ، 31 اہلکار سرنڈر

کاروائیاں: چوکیاں فتح، 2 ٹینک تباہ، 31 اہلکار سرنڈر

 

مجاہدین نے قندہار، نیمروز، زابل، ہرات وسرپل صوبوں میں کٹھ پتلی فوجیوں پر حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق جمعہ کے روز دو پہر گیارہ بجے کے لگ بھگ صوبہ سرپل ضلع سیداباد کے منگوت کے علاقے میں دشمن پر حملے کے نتیجے میں اہم کمانڈر عبد الغنی ولد محمد نبی ہلاک ہوا۔

رپوٹ کے مطابق جمعہ کے رات عشاء کے وقت سات بجے کے لگ بھگ صوبہ قندہار کے صدر مقام قندہار شہر کے حلقہ نمبر دو کے علاقے میں مسلحانہ کاروائی کے نتیجے میں ایک جاسوس ہلاک ہوا۔ اور جمعہ کے رات عشاء کے وقت ضلع ژڑئی کے سنگحصار کے اسلم پٹرول پمپ کے علاقے میں واقع چوکی پر حملہ ہوا، جس سے چوکی فتح اور 6 اہلکار ہلاک ہوئے۔ اسی طرح جمعہ کے روز سہ پہر دو بجے کے لگ بھگ ضلع ڈنڈ کے زلخان کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکہ سے ایک اہلکار ہلاک ہوا۔

اطلاع کے مطابق جمعہ کے روز صبح آٹھ بجے کے لگ بھگ صوبہ ہرات ضلع کھسان کے اسلام قلعہ کے علاقے میں کمانڈوز پر حملے کے نتیجے میں 2 ٹینک تبا، 2 کمانڈوز ہلاک، جبکہ 4 مزید زخمی ہوئے۔

یاد رہے کہ دشمن کے فائرنگ سے ایک مجاہد زخمی، جبکہ دوسرا شہید ہوا۔ تقبلہ اللہ تعالی

ذرائع کے مطابق جمعہ کے رات دس بجے کے لگ بھگ صوبہ نیمروز ضلع دلارام میں واقع چوکی پر حملہ ہوا، جس سے چوکی فتح، 10 اہلکار ہلاک اور مجاہدین نے ایک اینٹی ائیرگرافٹ گن، 3 ہیوی مشن گن، پانچ کارمولی، 2 راکٹ لانچر اور مارٹرتوپ سمیت مختلف النوع فوجی سازوسامان غنیمت کرلیا۔

یاد رہے کہ دشمن کے فائرنگ سے 2 مجاہدین زخمی ہوئے۔

آمدہ رپوٹ کے مطابق جمعہ کے رات عشاء کے وقت آٹھ بجے کے لگ بھگ صوبہ زابل ضلع میزان میں لیزر گن حملے کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک ہوا۔ اور جمعہ کے رات عشاء کے وقت نو بجے کے لگ بھگ صوبائی دار الحکومت قلات شہر کے تورئی نامی چوکی پر لیزر گن حملہ ہوا، جس سے ایک اور اہلکار ہلاک ہوا۔

ذرائع کے مطابق صوبہ ہلمند ضلع مارجہ میں 8 پولیس وجنگجو (باران ولد عبد الله جان، محمد خان ولد فتح خان، نیک محمد ولد فتح خان، نظر گل ولد محمد معصوم، عبد الجبار ولد صوبدار، عصمت الله ولد غلام محی الدین، خان اغا ولد عبد الرؤف اور عبد القدیر ولد عبد الغفور) مجاہدین سے آملے۔ اور ضلع نادعلی میں سات پولیس وفوجیوں (نور الله ولد بسم الله، سرور ولد سلیمان، محمد ابراهیم ولد بسم الله، نعمت الله ولد سیف الله، عصمت الله ولد عبد الاحد، شیر گل ولد جمعه گل اور باز محمد ولد اختر محمد) نے مجاہدین کے سامنے ہتھیار ڈالے۔ اسی طرح ضلع سنگین میں 10 اہلکاروں (شفیع الله ولد عبد الحبیب، خان محمد ولد عبد الودود، عبد الرزاق ولد عبید الله، سردار ولد راز محمد، سلیمان ولد نصر الله، مسجد گل ولد قلندر، ضیاؤ الحق ولد ميرا جان، عبد الباقي ولد پیدا محمد،  عبد الحنان ولد حاجي وزیر اور عمر ولد ميراجان) نے مجاہدین کے سامنے ہتھیار ڈالے۔ دوسری جانب صوبائی دار الحکومت لشکرگاہ شہر کے حلقہ نمبر چار کے باباجی کے علاقے میں پانچ پولیس اہلکار (حزب الله ولد عبد الظاهر، شیر محمد ولد اغا محمد، سید ولي ولد سید شاه، اغا محمد ولد محمد قاسم اور حیات الله ولد عبدالصمد) مجاہدین سے آملے۔

ذرائع کے مطابق جمعرات کے روز صبح کے وقت صوبہ ہرات ضلع اوبئی میں ایک جج استاذ عبید اللہ ولد محمد حنیف نے مجاہدین کی مخالفت سے دست برداری کا اعلان کیا۔

Related posts