نومبر 29, 2020

ہلمند میں امریکی بمباری اورمعاہدے کی خلاف ورزی پر ترجمان کا بیان

ہلمند میں امریکی بمباری اورمعاہدے کی خلاف ورزی پر ترجمان کا بیان

ہلمند میں امریکی افواج کی بمباری اورمعاہدے کی باربار خلاف ورزیوں  کےبابت امارت اسلامیہ کے ترجمان کا بیان

ہلمند میں حالیہ تبدیلیوں کے بعد امریکی افواج نے غیرذمہ دارانہ بمباریوں سے دوحہ معاہدہ کی متعددکھلی  خلاف ورزیاں کی ہیں۔

دوحہ معاہدے کی رو سے امریکی افواج جنگی علاقے اور جنگ کے وقت کے علاوہ دیگر مقامات پر بمباری کرسکتی ہے اور نہ ہی کسی کو نشانہ بنا سکتی ہے۔

مگر گذشتہ دنوں کے دوران دن رات ڈرون اور دیگر طیاروں کے ذریعے صوبہ ہلمند کے نہرسراج، خوشکاوہ، باباجی۔  ضلع گریشک کے مالگیر اور بندبرق۔سنگین، مارجہ، ناوہ اور نادعلی اضلاع کے مختلف علاقوں پر متعدد بار بمباری کی گئی۔ اسی طرح فراہ اور دیگر صوبوں میں بھی فضائی حملے کیے ہیں، جو  دوحہ معاہدہ کی کھلی اور واضح خلاف ورزی ہے۔

امارت اسلامیہ اور امریکا کے درمیان دوحہ معاہدے کی تمام مندرجات واضح ہیں،  کیوں کہ مخالف فریق بار بار معاہدے کی خلاف ورزی کررہا ہے،اشتعال انگیز اعمال انجام دے رہاہے   اور جنگ کی جگہ اور جنگی حالت کے علاوہ دیگر علاقوں پر بمباری کررہا ہے۔

اس طرح اقدامات کو  بار بار دہرانے سے نتائج کی ذمہ داری امریکی فریق پر عائد ہوگی۔

قاری محمد یوسف احمدی ترجمان امارت اسلامیہ

یکم ربیع الاول 1442 ھ بمطابق 18 اکتوبر 2020 ء

Related posts