اکتوبر 27, 2020

ضلعی مرکز فتح، کمانڈروں سمیت 14ہلاک، 23سرنڈر، غنائم

ضلعی مرکز فتح، کمانڈروں سمیت 14ہلاک، 23سرنڈر، غنائم

 

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے ہلمند، بادغیس،ہرات اور قندہار صوبوں میں دشمن کے مراکز اور کاروان پر حملہ کیا، جب کہ بادغیس، زابل، ہرات اور ہلمند صوبوں میں 23 سیکورٹی اہلکار مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

اطلاعات کے مطابق بدھ کےروز صوبہ ہلمند ضلع گریشک کے عبدالعزیز پمپ کے علاقے میں مجاہدین نے شورآب فوجی مرکز تیل لے جانے والے آئل بھرے ٹینکرکو ڈرائیور سمیت حراست میں لیا اور سربند کے علاقے میں رات کے وقت کمانڈو کے کاروان پر شدید حملہ کیا،جس کے نتیجے میں 2 فوجی ٹینک تباہ ہونے کے علاوہ 5 فوجی ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق صوبہ بادغیس ضلع قادس کے مرکز اور دفاعی چوکیوں    پر مجاہدین نے عشاء کے وقت  ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا،جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے مرکز فتح ہونے کے علاوہ وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 3 ہلاک، 14 زخمی اور دیگر فرار ہوئے اور 3 ٹینک بھی تباہ ہوئے۔

واضح رہے کہ مجاہدین نےکافی مقدار میں ہلکے و بھاری ہتھیار بھی قبضے میں لیا اور مرکز سے عقب نشینی اپنالی۔

دوسری جانب  کٹھ پتلی فوجوں کے درمیان توتو میں میں کے بعد لڑائی چھڑگئی، جس میں 2 فوجی ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے۔

اسی طرح بدھ کےروز صوبہ ہرات ضلع زندہ جان کے دہنہ شہر کے علاقے میں مجاہدین کے حملے میں گاڑی تباہ ہوئی اور اس میں سوار کمانڈر سمیت 2 اہلکار ہلاک ہوئے۔

نیز صوبہ قندہار کے صدر مقام قندہار شہر  میں مجاہدین کے حملے میں ایک آ‌فسر ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا اور ضلع بولدک کے مرکز کے قریب مجاہدین نے ایک جنگجو کو قتل کردیا۔

ذرائع کے مطابق کمیشن برائے دعوت و ارشاد امارت اسلامیہ کے عہدیداروں کی جدوجہد کے نتیجے میں صوبہ بادغیس ضلع تگاب عالم میں 15، صوبہ زابل کے صدر مقام قلات شہر میں 5، صوبہ ہرات ضلع شینڈنڈ میں ایک اور صوبہ ہلمند کے کجکی اور گریشک اضلاع میں 2 سیکورٹی اہلکاروں نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا۔

Related posts