نومبر 23, 2020

فوجی درندگی، خواتین بچوں سمیت 18 شہید و زخمی

فوجی درندگی، خواتین بچوں سمیت 18 شہید و زخمی

کٹھ پتلی فوجوں اور نیویارک و واشنگٹن کے محافظوں نے بلخ، بغلان، فراہ، بادغیس، سرپل،فاریاب اور قندوز صوبوں میں نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق پیر کےروز صبح کے وقت صوبہ بلخ ضلع خاص بلخ کے شہرک کلفت بندر کے علاقے میں کٹھ پتلی فوجوں کی فائرنگ سے ایک خاتون سمیت 4 افراد شہید ہوئے، جب کہ کئی روز سے کٹھ پتلی فوجوں نے صوبہ بغلان ضلع پل خمری  کے سرخ کوتل کے گداخیل اور ورودکان گاؤں کو توپ خانے کا نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں متعدد مکانات تباہ ہونے کے علاوہ  خواتین اور بچوں سمیت متعدد افراد شہید اور زخمی ہوئے ہیں۔

اسی طرح صبح کے وقت صوبہ فراہ ضلع فراہ کے مویشی گنج پر کٹھ پتلی فوجوں کی فائرنگ سے عبدالمنان نامی شہری شہید، جب کہ صوبہ بادغیس کے مقر اور مرغاب اضلاع میں کٹھ پتلی فوجوں کی درندگی اور بمباری کے دوران 2 شہری شہید ہوئے اور صوبہ سرپل ضلع سنگ چارک کے مربوطہ علاقے کو کٹھ پتلی غلاموں نے مارٹرگولوں کا نشانہ بنایا،جس کے نتیجے میں ایک شخص شہید جب کہ 5 زخمی ہوئے ۔

نیز صوبہ فاریاب ضلع دولت آباد کے مرکز میں کٹھ پتلی فوجوں کی اسی نوعت حملے سے ایک ڈاکٹر شہید ہوا جبکہ صوبہ قندوز ضلع دشت آرچی کے عیدگاہ کے علاقے میں توپ خانے سے 2 بچے شہید جب کہ 2 زخمی ہوئے۔ اناللہ وانآ الیہ راجعون

Related posts