اگست 04, 2020

حملے ودعوت، پائلٹ سمیت 3 ہلاک، 3 گرفتار، 12 سرنڈر

حملے ودعوت، پائلٹ سمیت 3 ہلاک، 3 گرفتار، 12 سرنڈر

امارت اسلامیہ کےمجاہدین نے کابل، ہرات، زابل، قندہار،پکتیکا اور نورستان صوبوں میں کٹھ پتلی دشمن کو نشانہ بنایا، صوبہ فاریاب میں باہمی لڑائی لڑی گئی، جب کہ فاریاب اور پکتیا صوبوں میں 12 سیکورٹی اہلکاروں نے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا۔

اطلاعات کے مطابق منگل کےرو ز صبح کے وقت کابل شہر کے ارزان قیمت کے دولت آباد کے مقام پر مجاہدین نے  جنگی ہیلی کاپٹر کے پائلٹ اور ڈرون طیاروں کے میکنیک عزت اللہ ولد خوشحال باشندہ صوبہ کنڑ ضلع پیچ درہ کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

دوسری جانب دو روز قبل صوبہ ہرات ضلع پشتون زرغون کے مربوطہ علاقے میں مجاہدین نے خفیہ اطلاع کے سلسلے میں کابل انتظامیہ کی 2 فوجیوں کو اسلحہ سمیت گرفتار کرلیے،جب کہ صوبہ زابل کے صدر مقام قلات شہر کے قریب کابل-قندہار ہائی وے پر مجاہدین نے چیکنگ کے دوران ایک فوجی کو گرفتار کرلیا۔

اسی طرح صوبہ قندہار ضلع شاہ ولیکوٹ کے سرہ سخر کے علاقے میں بم دھماکہ سے ایک فوجی ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا اور رات کے وقت صوبہ پکتیکا ضلع خیرکوٹ کے پائندہ خیل کے علاقے میں جنگجوؤں کی چوکی پر حملے کے دوران 4 شرپسند زخمی ہوئے۔

نیز صوبہ نورستان ضلع نورگرام کے سنگ پل کے علاقے میں مجاہدین نے شکراللہ ولد گل باز نامی ڈاکو کو رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا، جب کہ صوبہ فاریاب ضلع دولت آباد کے مرکز میں کٹھ پتلی فوجوں کے درمیان باہمی لڑائی کے دوران ایک فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق کمیشن برائے دعوت و ارشاد امارت اسلامیہ کے کارکنوں کی جدوجہد کے نتیجے میں کابل انتظامیہ کے 9 سیکورٹی اہلکاروں سخی داد ولد اللہ داد، شیرمحمد ولد بیگ محمد، عزت اللہ ولد عبدالوہاب، اسماعیل ولد نجیب اللہ، قربان ولد بیدیل، احمد ولد عبدالواحد، ذبیح اللہ ولد حفیظ اللہ، شالمان ولد محمدخان اور عبدالرحمن ولد عبدالخلیل جب کہ صوبہ پکتیکا ضلع جانی خیل کے باشندے 3 فوجیوں احسان اللہ ، اسداللہ اور کمال الدین فرزندان فیض محمد نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا۔

Related posts