اگست 04, 2020

بلخ اور بغلان میں 62 سیکورٹی اہلکار سرنڈر

بلخ اور بغلان میں 62 سیکورٹی اہلکار سرنڈر

کمیشن برائے دعوت و ارشاد امارت اسلامیہ افغانستان کے کارکنوں کی تگ ودو کے نتیجے میں بلخ اور بغلان صوبوں میں کابل انتظامیہ کے 62 سیکورٹی اہلکاروں نے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا۔

اطلاعات کے مطابق امیرالمؤمنین کی عام معافی اور دعوت و ارشاد کمیشن کے کارکنوں کی جدوجہد کے نتیجے میں صوبہ بلخ کے چمتال، شولگر، چاربولک، زارع، دولت آباد، کشندہ اور کلدار اضلاع میں کابل انتظامیہ کے 40 سیکورٹی اہلکارعبدالشکور ولد عبدالحق، بسم اللہ ولد شاہ غازی، شعیب ولد ممتاز، محمدحنیف ولد قربان، نعمت اللہ ولد طالب شاہ، حاجی محمد ولد عبداللطیف، میراجان ولد امیرجان، محمدفرید ولد لعل محمد، جان محمد ولد یارمحمد، عبدالرازق ولد شراف الدین،  محمدظاہر ولد محمدعظیم، امین اللہ ولد میرعالم، بشیر ولد عیدمحمد، طواف ولد محمد خان،شاہ محمد عطاءاللہ، ذبیح اللہ ولد عبدالجلیل، موسی ولد ضیاخان، نادر ولد محمدہاشم، موسی ولد شاہ محمد، فیض اللہ ولد دین محمد، نورالدین ولد فضل الدین، سیدغلام ولد سیدعبداللہ، گل محمد ولد جمعہ خان، محمدگل ولد محمدالدین، اللہ بردی ولد دولت، تاغن ولد چاری، محمدبردی ولد استہ قربان، اللہ مراد ولد جمعہ، قومندان سلام ولد خدائےنظر، ثمرالدین ولد گل مراد، گل محمد ولد بابہ ، امین ولد آق محمد، جلال الدین ولد صاحب جمال، سیدعمر ولدثمرالدین، صدیق ولد شاہ مراد، صادق ولد صدیق، شائستہ میر ولد قدرت اللہ، عبدالباسط ولد  عبدالخالق، فضل نور ولد مرزا اور جورہ بائی ولد محمدعالم نےحقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

دوسری جانب صوبہ بغلان ضلع پل خمری کے رہائشی 22 سیکورٹی اہلکاروں نے مجاہدین کی دعوت کو لبیک کہہ کر مخالفت سے دستبرداری کا اعلا ن کیا، جن میں جمعہ خان ولد عبدالرؤف، دوست محمد ولد غریب محمد، گل محمد ولد ولی محمد، نجیب اللہ ولد محمدانور، ضیاءاللہ ولد محمدحکیم، شاہ محمد ولد نوراحمد، نادرخان ولد محمد، محمدالدین ولدخال مؤمن، سراج الحق ولد نورمحمد، گل محمد ولد ولی محمد، مایل ولد فراموز، عبدالعزیز ولد محب اللہ، حبیب اللہ ولد سالار، میرعالم ولد بہاؤالدین، ذبیح اللہ ولد سیدمحمد، احمدشعیب ولد جنت گل، محمد نسیم ولد محمد سردار، اسماعیل ولد حبیب اللہ، عبدالغفار ولد حاجی عبدالواحد، محمدعمر ولد زیڑگل، احمداللہ ولد محمداللہ اور سلطان محمد ولد حاجی جمعہ خان شامل ہیں۔

Related posts