جولائی 11, 2020

سیکورٹی فورسز چوکیوں سے فرار، 9 اہلکار سرنڈر

 

سیکورٹی فورسز نے صوبہ قندہار میں چوکیوں کو چھوڑ کر فرار ہوئے، جب کہ فاریاب، ہرات، بادغیس، قندہار اور دائی کنڈی اضلاع میں کمیشن برائے دعوت وارشاد کے کارکنوں کی جدوجہد کے نتیجے میں 9 سیکورٹی اہلکار مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

اطلاعات کے مطابق صوبہ فاریاب ضلع قیصار کے باشندوں 4 سیکورٹی اہلکاروں شیرخان ولد گل خان، نظرمحمد ولد محی الدین، محمدحسن ولد عبداللہ اور غلام نبی ولد عبدالخالق، صوبہ ہرات کےاوبہ اور غوریان  اضلاع کے رہائشی دو   افغان فوجیوں محمدیونس ولد عبدالحکیم اور بدرالدین ولد شہاب الدین، صوبہ بادغیس ضلع تگاب عالم کے باشند افغان فوجی بازگل ولد بامن،صوبہ دائی کنڈی ضلع گیزآب کے رہائشی سیدرسول ولد عبدالمحمد اورصوبہ قندہار ضلع معروف کے رہائشی سیکورٹی اہلکار نظام نےحقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار ہوئے اور نظام الدین نے ایک موٹرسائیکل، ایک پستول اور دیگر فوجی سازوسامان بھی مجاہدین کے حوالےکردیا۔

دوسری جانب صوبہ قندہار ضلع میوند کے جوگرم کے علاقے میں قائم 3 چوکیوں اور کٹھ پتلی فوجوں نے بدھ کےروز شام کے وقت مجاہدین کے ممکنہ حملوں کی خوف سے چھوڑ کر فرار کی راہ اپنالی۔

واضح رہےکہ اب علاقے پر مجاہدین کا قبضہ ہے۔

Related posts