اپریل 02, 2020

الفتح حملے و دعوت، 11اہلکار سرنڈر، 18 ہلاک و زخمی، غنائم

الفتح حملے و دعوت، 11اہلکار سرنڈر، 18 ہلاک و زخمی، غنائم

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے ننگرہار، بلخ، لوگراور قندوزصوبوں میں حملہ کیا، جب کہ صوبہ بغلان میں کمیشن برائے دعوت وارشاد کے کارکنوں کی جدوجہد کے نتیجے میں 11 اہلکار مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

آمدہ اطلاعات کے مطابق پیر کےروز صبح کے وقت صوبہ ننگرہار ضلع پچیرآگام کے ہزارناؤ کے علاقے میں مجاہدین نے جارح امریکی و کٹھ پتلی کمانڈو پر حملہ کیا، جو دوپہر تک جاری رہا،جس کے نتیجے میں 6 اہلکار ہلاک جب کہ 7 زخمی ہوئے اور مجاہدین نے ایک رائفل، ایک دوربین اور دیگر فوجی سازوسامان غنیمت کرلی۔

دوسری جانب منگل کےروز دوپہر کے وقت صوبہ بلخ ضلع چاربولک کے خان آباد کے علاقے میں فوجی بیس پر سنائیپرگن حملے میں ایک فوجی ہلاک جب کہ دوسرا زخمی ہوا۔

دریں اثناء صوبہ لوگر کے صدر مقام پل عالم شہر کے دوغ آباد کے علاقے میں مجاہدین نے 2 جنگجوؤں کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور 2 عدد کلاشنکوفوں کو قبضے میں لیا۔

اسی طرح منگل کےروز صبح کے وقت صوبہ قندوز کے صدر مقام چرخاب کے علاقے میں مجاہدین کے حملے میں ایک فوجی زخمی ہوا۔

صوبہ بغلان سے موصولہ رپورٹ کے مطابق منگل کےروز صدر مقام پل خمری شہر کے مختلف علاقوں کے باشندوں 11 سیکورٹی اہلکاروں نے کمیشن برائے دعوت وارشاد کے کارکنوں کی دعوت کو لبیک کہہ مخالفت سے دستبردار ہوئے، جن میں امین اللہ ولد حبیب اللہ، منان ولد شیراحمد، سیف اللہ ولد عبدالواحد، عبدالنصیر ولد عبدالخالق، عبدالمتین ولد عبدالرحیم، اجمل ولد محمدحسین، زمرئے ولد عبدالمنان، ہیۃاللہ ولد گل محمد، محمدزرغون ولد عجب خان،نظیرولدشریف اور امام الدین ولد کلی وزیر شامل ہیں۔

Related posts