اپریل 02, 2020

جوزجان، بدخشان،ننگرہار، لوگراور بلخ حملے،15 ہلاک

جوزجان، بدخشان،ننگرہار، لوگراور بلخ حملے،15 ہلاک

الفتح آپریشن کے سلسلے میں  امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے جوزجان، بدخشان،ننگرہار، لوگراور بلخ صوبوں میں کٹھ پتلی فوجوں کو نشانہ بنایا۔

اطلاعات کے مطابق پیر اور منگل کی درمیانی شب  عشاء کے وقت صوبہ جوزجان ضلع مردیان کےمرکز کے قریب مجاہدین کے حملے میں خفیہ ادارے کے 2 اہلکار ہلاک ہوئے اور مجاہدین نے دو کلاشنکوفیں،ایک ہینڈگرنیڈ وغیرہ بھی قبضے میں لیا۔

صوبہ بلخ سے اطلاع ملی ہے کہ پیر کےروز شام کے وقت ضلع چاربولک کے سبزکار کے علاقے میں گشتی پارٹی پر حملے میں ایک اہلکار ہلاک اور شام ہی کے وقت ضلع خاص بلخ کےمرگین تپہ کے مقام پر فوجی بیس پر حملے کے دوران ایک فوجی ہلاک،جب کہ عشاء کے وقت بنگلیہ کے مقام پر فوجی بیس پر لیزرگن حملے کے نتیجے میں 5 فوجی ہلاک، 3 زخمی ہوئے اور اسی وقت ضلع چمتال کے قوتن کے علاقے میں پولیس مرکز پر اسی نوعیت حملے میں ایک اہلکار مارا گیا۔

رپورٹ کے مطابق پیر کےروز دوپہر کے وقت صوبہ لوگر کے صدر مقام پل عالم شہر کے بادخواب شانہ کے علاقے میں جنگجوؤں پر ہونے والے حملے میں 3 اہلکار ہلاک اور کمانڈر ملنگ زخمی ہوا۔

دوسری جانب پیر اور منگل کی درمیانی شب صوبہ ننگرہار ضلع بٹی کوٹ کے شینواری قلعہ کے قریب مجاہدین کے حملے میں ایک جنگجو ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے۔

دریں اثناء صوبہ بدخشان ضلع جرم کے چولہ کے علاقے میں مجاہدین نے احمدخان نامی سیکورٹی اہلکار کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

Related posts