فروری 17, 2020

خواتین اور بچوں کے حقوق کے محافظ کہاں ہیں؟

خواتین اور بچوں کے حقوق کے محافظ کہاں ہیں؟

آج کی بات

قابض امریکی فوج اور کابل انتظامیہ نے گذشتہ رات صوبہ بلخ کے ضلع بوقہ میں ایک خاندان کے 7 افراد (3 خواتین اور 4 بچے) کو شہید کردیا ، دشمن کی اس ظالمانہ کارروائی کے نتیجے میں متعدد مکانات کو نقصان پہنچا اور سردی کے موسم میں انہیں نقل مکانی اور دیگر مشکلات سے دوچار کر دیا ۔

کابل انتظامیہ نے اس حملے کی تصدیق کی ہے لیکن عام شہریوں کی ہلاکتوں پر لاعلمی کا اظہار کیا، مقامی لوگوں نے میڈیا کو بتایا ہے کہ اس علاقے میں طالبان موجود نہیں تھے لیکن اس کے باوجود انہیں نشانہ بنایا گیا اور اب تک افغان فورسز کی جانب سے مارٹر حملے جاری ہیں جس سے لوگوں کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے ۔

سفاک دشمن کا یہ حملہ پہلا ہے اور نہ ہی خونخوار دشمن کی وحشت کے پیش یہ آخری حملہ ہوگا! دشمن شہری اہداف ، تعلیمی و صحت مراکز ، بازاروں اور رہائشی علاقوں پر مسلسل بمباری کررہا ہے ، چھاپے مار رہا ہے اور راکٹ فائر کررہا ہے، اس طرح کے حملوں اور چھاپوں کے نتیجے میں عام شہریوں کو بہت بڑا جانی و مالی نقصان ہوا ہے۔ خاص کر خواتین اور بچے زیادہ متاثر اور پریشانیوں کا شکار ہیں ۔

جس طرح بلخ کے اس واقعے میں خواتین اور بچے شہید ہوگئے، اسی طرح کچھ عرصہ قبل ہلمند کے ضلع موسی قلعہ میں شادی کی تقریب پر دشمن نے فضائی حملہ کر کے 93 افراد کو شہید کر دیا جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے شامل تھے، اسی طرح ننگرہار ، میدان وردگ ، غزنی ، پکتیا ، قندھار ، روزگان ، فراہ ، فاریاب ، بدخشان ، قندوز ، بغلان ، کاپیسا اور دیگر صوبوں میں آئے روز خواتین اور بچے نشانہ بن کر رہے ہیں، ان کے گھر تباہ ہو رہے ہیں اور ان کا سامان لوٹا جاتا ہے تاہم افسوس ناک امر یہ ہے کہ خواتین اور بچوں کے حقوق کے علمبردار تنظیمیں خواتین اور بچوں کے ساتھ سفاک دشمن کے ان مظالم پر خاموش ہیں اور کسی ایک تنظیم نے بھی ردعمل کا اظہار نہیں کیا ہے ۔

خواتین اور بچوں کے حقوق کے علمبردار اور معاشرے میں انسانی حقوق کی تنظمیں نہتے افغان شہریوں پر قابض امریکی فوج اور کابل انتظامیہ کی جانب سے ہونے والے مظالم اور ان کے املاک تباہ کرنے کی مذمت کریں، ان کی روک تھام کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھائیں اور افغان عوام پر جاری مظالم کے خلاف آواز اٹھائیں اور عالمی برادری تک ان کی فریاد پہنچائیں، افغان عوام پر ہونے والے مظالم پر خاموشی سے دشمن ناجائز فائدہ اٹھا رہا ہے اور مزید جرات کے ساتھ ظلم و ستم کرے گا ۔

امارت اسلامیہ مظلوم عوام کو نشانہ بنانے ، ان کے املاک کو تباہ کرنے کی پرزور مذمت کرتی ہے اور مجرموں کو کڑی سزا دینے کا مطالبہ کرتی ہے ۔

بے وقوف دشمن کو ان اقدامات سے کچھ فائدہ نہیں ملے گا، بلکہ اس کے خلاف عوام میں مزید نفرت بڑھے گی اور اس کے نتیجے میں وہ مجاہدین کی مزید حمایت کریں گے، ہم کسی بھی وقت اور ہر حال میں اپنے عوام کے حقوق کے تحفظ کے لئے پرعزم ہیں۔ ہم اس غیور قوم کے سر ، عزت اور دولت کے تحفظ کو ترجیح دیتے ہیں اور اپنے عوام کو یہ یقین دلاتے ہیں کہ ظالم اور قابض دشمن سے ضرور بدلہ لے لیں گے ۔ ان شاء اللہ

Related posts