ستمبر 19, 2020

تازه ترین

ایک رات اور جرائم کے متعدد واقعات

ایک رات اور جرائم کے متعدد واقعات

آج کی بات

حملہ آوروں اور افغان فورسز نے گذشتہ رات ملک کے مختلف علاقوں خصوصا قندوز ، کاپیسا ، لغمان اور فراہ میں شہریوں کے گھروں ، مدرسوں اور مساجد پر حملے کئے ، متعدد نہتے شہریوں کو شہید ، زخمی اور گرفتار کیا، ان کے گھر تباہ کردیئے اور عام لوگوں کو بڑے پیمانے پر مالی نقصان ہوا ۔

قابض امریکی فوج اور افغان اجرتی فورسز نے قندوز کے دارالحکومت میں چقور قشلاق کے علاقے میں عام شہریوں کے گھروں اور احمدی نامی ایک مدرسہ پر چھاپے کے دوران چھ معصوم طلبہ کو شہید جبکہ محلے کے پیش امام، مدرسے کے استاد اور چار طلباء کو حراست میں لے لیا ۔

صوبہ کاپیسا کے ضلع تگاب کے بدراب اور سہ پدر کے علاقوں میں حملہ آوروں اور افغان فورسز نے چھاپے کے دوران متعدد گھروں کے دروازوں کو دھماکہ خیز مواد سے اڑایا، ایک شخص اور اس کے گھر کی دو خواتین کو شہید کر دیا گیا ۔

صوبہ لغمان کے ضلع الینگار کے گوڑ گنڈی کے علاقے میں قابض امریکی فوج اور افغان فورسز نے ایک مسجد اور متعدد مکانات کو تباہ کردیا ، 6 شہریوں کو شہید اور 3 افراد کو زخمی کردیا اور لوگوں کو مالی نقصان بھی پہنچایا ۔

مشترکہ دشمن کے ایک فضائی حملے میں صوبہ قندوز کے ضلع خان آباد کے قریب دو طلبا زخمی ہوگئے

اسی طرح قابض امریکی فوج اور افغان فورسز نے صوبہ فراہ کے علاقے خور مالق میں عام شہریوں کے گھروں پر چھاپے کے دوران خوف و ہراس پھیلایا، دکانوں کو توڑ کر نقدی رقم اور قیمتی اشیاء کو چھین لیا، ایک گھر کو دھماکہ خیز مواد سے اڑایا جبکہ چھ افراد کو گرفتار کیا گیا ۔

افغان عوام ہر روز قابض افواج اور افغان فورسز کے جرائم اور مظالم کا نشانہ بن رہے ہیں، سفاک دشمن نہتے شہریوں کی بستیوں ، مدرسوں ، مساجد ، اسکولوں ، کلینکوں اور عام عوامی مقامات پر مسلسل چھاپے مارتا رہتا ہے۔ مختلف شکلوں میں شہریوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے ، ان کا سامان لوٹ لیا جاتا ہے اور بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی جاتی ہے ۔

قابض دشمن اور کابل انتظامیہ اگرچہ بظاہر انسانی حقوق، انسانیت دوستی ، خواتین اور بچوں کے حقوق ، مذہبی عقائد اور تعلیمی اداروں کے تحفظ کے بڑے علمبردار ہیں تاہم عملی طور پر ان کا کردار مختلف اور شرمناک ہے دشمن نے اپنے کردار سے انسانی اقدار اور حقوق سے اپنی دشمنی ظاہر کر کے اپنا مکروہ چہرہ خود بے نقاب کر دیا ۔

امارت اسلامیہ عام شہریوں پر سفاک دشمن کے مظالم کی مذمت کرتی ہے اور اس عمل کو دشمن کی بزدلی اور ناکامی قرار دیتی ہے، امارت اسلامیہ نے ہمیشہ اپنے عوام ، اقدار اور مذہبی اشعار کا دفاع کیا ہے اور سفاک دشمن سے بدلہ لیا ہے، ہم پرعزم ہیں کہ اپنے عوام، اقدار اور دینی شعائر کا دفاع کریں اور اس حوالے سے کسی بھی قربانی سے گریز نہیں کریں گے ۔

Related posts