ستمبر 18, 2020

الفتح کی کاروائیاں،گاڑیاں تباہ، 10 ہلاک،2 سرنڈر

الفتح کی کاروائیاں،گاڑیاں تباہ، 10 ہلاک،2 سرنڈر

الفتح آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل، بغلان، تخار، بدخشان اور خوست صوبوں میں نشانہ بنایا، جب کہ غزنی میں فوجی شدید  سردی سے ہلا ک ہوئے۔

اطلاعات کے مطابق بدھ کےروز سہ پہر کے وقت کابل شہر کے کمپنی کے علاقے میں مجاہدین نے صوبہ میدان کے رہائشی اینٹلی جنس سروس اہلکار شہباز کو موت کے گھاٹ اتار دیا اور شام کے وقت ضلع بگرامی کے مربوطہ علاقے میں مجاہدین نے سپیشل فورس اہلکار لیاقت ولد خان کو قتل کردیا۔

دریں اثناء صوبہ بغلان کے صدر مقام پل خمری شہر کے قریب مجاہدین کے حملے میں نیٹو کے 3 آئل ٹینکر جل کر خاکستر ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق جمعرات کےروز علی الصبح صوبہ تخار ضلع خواجہ غار کے مربوطہ علاقے میں  واقع چوکی میں مجاہدین کی نصب کردہ بم سے ہونیوالے دھماکہ نے 4 فوجیوں کی جان لی۔

واضح رہےکہ رات کے وقت دشمن چوکی سےچلا جاتا ہے اور صبح دوبارہ آجاتا ہے۔

صوبہ بدخشان سے اطلاع ملی ہےکہ جمعرات کےروز دوپہر کے وقت ضلع وردوج کے سیل ملحہ کے علاقے میں بم دھماکہ سے فوجی رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار اہلکاروں میں سے 2 ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے اور بدھ کےروز ضلع ارگو کے دہ بالا گاؤں کے رہائشی افغان فوجی اسداللہ ولد عبدالباقی  اور ضلع تشکان کے بازار کے باشندے افغان فوجی ذبیح اللہ ولد امان اللہ نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

اسی طرح بدھ کےروز دوپہر سے قبل صوبہ خوست کے صدر مقام خوست شہر کے لکنو کے علاقے تبئی کے مقام پر حکمت عملی کے تحت ہونے والے دھماکہ سے 2 کمانڈو زخمی ہوئے۔

دوسری جانب منگل اور بدھ کی درمیانی شب صوبہ غزنی ضلع جغتو کے ملا قلعہ کے مقام پر 2 کٹھ پتلی فوجی شدید سردی سے ہلاک ہوئے۔

Related posts